کیوی ٹیم کے گول کیپر بھی کرائسٹ چرچ واقعے میں شہید ہونے والوں میں شامل

نیوزی لینڈ کی قومی فٹسل ٹیم کے گول کیپر عطا الیان بھی کرائسٹ چرچ واقعے میں شہید ہونے والوں میں شامل ہیں۔

نیوزی لینڈ کی فٹبال ایسوسی ایشن نے بھی کرائسٹ چرچ واقعے میں عطا الیان کی شہادت کی تصدیق کرتے ہوئے شدید رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔

عطا الیان نیوزی لینڈ کی قومی فٹسل ٹیم کے گول کیپر تھے جنہوں نے 19 انٹرنیشنل میچز کھیلے تھے جب کہ وہ ساتھ ہی مقامی اسکول کی فٹسل ٹیم کے کوچ بھی تھے اور وہ مین لینڈ کلب سے منسلک تھے۔

New Zealand Football

@NZ_Football

QUOTE | @NZ_Football Futsal Development Manager @margetts_josh: “To Atta’s family, we are deeply sorry for your loss. We can’t imagine what you are going through, but please know we love you and we are here for you during this incredibly difficult time.” @MainlandFooty

1,302 people are talking about this

شہید فٹبالر 2014 میں نیوزی لینڈ کی فٹسل ٹیم کے سال کے بہترین کھلاڑی قرار پائے تھے۔

شہید فٹبالر کا آبائی تعلق فلسطین سے تھا تاہم والدین کی ہجرت کے باعث ان کی پیدائش کویت کی تھی اور ان دنوں وہ سافٹ ایئر کمپنی بھی چلا رہے تھے جب کہ  ان کے پسماندگان میں اہلیہ اور ایک ننھی بیٹی شامل ہیں۔

شہید فٹبالر کے ساتھیوں نے کرائسٹ چرچ دہشت گردانہ حملے کے متاثرین سے اظہار یکجہتی کیلئے جائے وقوعہ پر پھول رکھ کر اپنے ساتھی کو خراج عقیدت پیش کیا۔

— فوٹو: نیوزی لینڈ میڈیا 

عطا الیان کے ساتھی فٹبالر اس موقع پر انہیں یاد کرکے ضبط نہ کرسکے اور زاروقطار روتے رہے۔

مین لینڈ فٹبال فیڈریشن نے عطا الیان سمیت کلب سے جڑے 3 فٹبالرز کی شہادت کی تصدیق کی ہے جن میں 24 سالہ طارق عمر اور 14 سالہ سید میلین شامل ہیں۔

خیال رہے کہ فٹسل کا شمار انڈور گیمز میں کیا جاتا ہے جو کہ فٹبال کی طرز کا کھیل ہے جس میں ہر ٹیم میں 5 کھلاڑی شامل ہوتے ہیں۔

یاد رہے کہ 15 مارچ کو نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی دو مساجد میں دہشت گردانہ حملے کے نتیجے میں 9 پاکستانیوں سمیت 50 افراد شہید اور درجنوں  زخمی ہوئے تھے۔
2019-03-18

اپنا تبصرہ بھیجیں