پاکستان کیلئے کھیلیں ٗپاکستان کے ساتھ نہیں،محسن خان

کراچی(این این آئی)پاکستانی کرکٹرمحسن حسن خان نے کہاہے کہ پاکستان کے لیے کھیلنا چاہیے پاکستان کے ساتھ نہیں،پاکستان میں صلاحیت کی کمی نہیں لیکن باصلاحیت افراد کو موقع نہیں دیا جاتا۔گزشتہ روز یہاں خصوصی بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ پاکستان میں کرکٹ کی تاریخ میں کئی اچھی ٹیمیں گزری ہیں لیکن 1992میں عمران خان کی کپتانی میں ورلڈ کپ جیتنے والی ٹیم سب سے بہترین تھی۔جب محسن خان سے سوال کیا گیا کہ وہ کرکٹ کی جانب کیسے آئے تو انہوں نے بتایاکہ اسکول اور کالج سے ہی وہ کھیلوں کے بہت شوقین تھے پر بعد میں کرکٹ میں آگے بڑھے۔انہوں نے کہاکہ کرکٹ میں ماجد خان اور نیول گواشکر جیسے کھلاڑی ان کے پسندیدہ رہے ہیں ۔محسن نے بتایا کہ اپنے فارغ وقت میں وہ ٹیلی ویژن دیکھتے ہیں جبکہ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ بھارتی فلم انڈسٹری میں بہت پیش رفت آئی ہے۔

کوہلی کے ریکارڈ کا علم تھا لیکن ٹیم کیلئے کھیلنے کو ترجیح دی ،بابر اعظم

دبئی (آئی این پی)پاکستانی کرکٹ ٹیم کے بلے باز بابراعظم نے ٹی 20میچز میں ہزار رنز کا ریکارڈ توڑنے پر رمیز راجہ کے سوال پر جواب دیتے ہوئے کہاکہ انہیں ویرات کوہلی کے ریکارڈ کا علم تھا لیکن وہ اپنے رنز نہیں گن رہے تھے بلکہ ان کی ہمیشہ کوشش ہوتی ہے کہ پورے اوورز کھیلیں ،وہ کوشش کررہے تھے کہ اپنی گیم کھیلیں وہ رنز بنا رہے تھے اور صرف ٹیم کے لیے کھیل رہے تھے۔ تفصیلات کے مطابق میچ کی اختتامی تقریب سے گفتگو کرتے ہوئے بابر اعظم کا کہناتھا کہ سب سے پہلے اللہ تعالی کا شکر ہے کہ اللہ اچھی اننگ کر وائی ، میں زیادہ چھکے یا چوکے مارتا نہیں کوشش کرتا ہوں۔ انہوں نے کہاکہ حفیظ بھائی نے ساتھ رکھا اس لئے اچھی اننگ ہوئی جبکہ میں خود کو سادہ رکھتا ہوں، جو گیند میری پہنچ میں آتی ہووہی کھیلتا ہوں لیکن کبھی کبھار چانس بھی لے لیتا ہوں۔

میڈیم پیسر محمد عباس نے اپنی کامیابی بیٹی کے نام کردی

ابوظہبی(آئی این پی ) آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ میں تباہی مچانے والے بولر محمد عباس نے اپنی کامیابی بیٹی کے نام کر تے ہوئے کہا ہے کہ یہ کامیابی میرے لیے بہت بڑی عزت کی بات ہے، ٹیسٹ کا پہلا تجربہ ہے، کوشش تھی کہ یہ کام انگلینڈ میں کروں مگر نہیں کرسکا۔ لیکن جلد سے جلد کرنے کی کوشش کی۔ جمعہ کو قومی ٹیم کے میڈیم فاسٹ بولر محمد عباس نے ابو ظبی ٹیسٹ میں شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے آسٹریلوی بولنگ لائن کو تباہ کیا اور 10 وکٹیں اپنے نام کیں۔محمد عباس کو مین آف دی میچ اور مین آف دی سیریز قرار دیا گیا۔اس موقع پر محمد عباس نے کہا کہ اس کامیابی پر اللہ تعالی کا شکر ادا کرتا ہوں، یہ دن بہت خوشی کے ہیں۔قومی کرکٹر نے کہا کہ کل بیٹی کی سالگرہ تھی اور اپنی یہ کامیابی بیٹی کے نام کرتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ پچ جیسی بھی ہو، میرا کام لائن میں بولنگ کرنا ہے، کوچ اظہر محمود سے میٹنگ ہوئی اور مخالف ٹیم کے پوائنٹس دیکھے، اسی پر بولنگ کی کوشش کی اور کامیابی ملی۔انہوں نے کہا یہ کامیابی میرے لیے بہت بڑی عزت کی بات ہے، ٹیسٹ کا پہلا تجربہ ہے، کوشش تھی کہ یہ کام انگلینڈ میں کروں مگر نہیں کرسکا لیکن جلد سے جلد کرنے کی کوشش کی۔میڈیم پیسر نے کہا کہ محنت کر رہا ہوں جب بھی ون ڈے میں ٹیم کو ضرورت ہوئی اور مینجمنٹ نے بلایا تو حاضر ہوں گا۔

ناقص کاکردگی پر محمد آصف کی عامر کیخلاف لب کشائی

اسلام آباد(آئی این پی)سنہ 2010میں اسپاٹ فکسنگ کی زد میں آنے والے پاکستان کے مایہ ناز فاسٹ بولر محمد آصف بھی محمد عامر کے خلاف لب کشائی کرگئے۔محمد عامر کی کارکردگی سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ عامر کی وجہ سے دوسرے بولرز کو مشکلات کا سامنا ہے۔ایک ٹی وی انٹرویو میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عامر کی ٹیم میں جگہ بنانے کے لئے باقی گیندبازوں کو تبدیل کیا جا رہا ہے جس کی وجہ سے کسی بھی بولر کی ٹیم میں جگہ نہیں بن پارہی۔محمد آصف نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ محمد عامر کی پابندی کے بعد کئی اچھے فاسٹ بولرز آئے، جنھوں نے پاکستان کو میچز جتوائے مگر حیران کن طور پر کوئی بھی ٹیم میں جگہ پکی نہ کرسکا، ان میں سے کچھ فاسٹ بولرز تو ایسے ہیں جنھیں یہی پتہ نہیں کہ وہ ٹیم میں ہیں بھی یا نہیں۔نئی گیند سے بلے بازوں کو چکرا دینے والے محمد آصف نے کہا کہ عامر کے علاوہ دیگرز بولرز کو بھی اتنا ہی اعتماد دیا جائے تو وہ اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرسکتے ہیں۔واضح رہے نوجوان فاسٹ بولر محمد عامر ایشیا کپ میں کوئی وکٹ حاصل نہ کرسکے تھے جس کے بعد انھیں آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ ٹیم سے ڈراپ کرکے کاکردگی اور اعتماد کی بحالی کے لئے ڈومیسٹک کھیلنے کی اجازت دے دی۔

ٹی20 نے دنیا بھر کی کرکٹ کو نقصان پہنچایا ہے : شعیب اختر

راولپنڈی (اسپورٹس ڈیسک) سابق فاسٹ باؤلر شعیب اختر نے کہا ہے کہ ٹی20 نے دنیا بھر کی کرکٹ کو نقصان پہنچایا ہے۔ایک انٹرویومیں شعیب اختر نے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی نے صرف پاکستان ہی نہیں بلکہ دنیا بھر کی کرکٹ کو نقصان پہنچایا ہے۔ لوگ ٹی ٹوئنٹی کی طرف بھاگ رہے ہیں۔ اور ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ ان کے جسم میں داخل ہوچکا ہے۔ سب سے زیادہ نقصان بیٹنگ میں ہوا ہے۔ بلا رکتا نہیں ہے ٗشاٹس لگ جاتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ویرات کوہلی اور روہت شرما جیسے چند ہی ایسے بیٹسمین ہیں جنھیں اننگز بنانی آتی ہے ٗ بولنگ بھی اس سے متاثر ہوئی ہے ٗ سارے بولرز چار چار اوورز کے بن کر رہ گئے ہیں۔انہوں نے کہ کہ لگتا ہے کہ جیسے ٹی ٹوئنٹی سے صرف پیسہ کمانا ہی اصل مقصد ہے لیکن اگر ٹیسٹ کرکٹ کو بچانا ہے تو پھر ٹیسٹ میچ کی فیس پچاس لاکھ کردیں پھر میں دیکھتا ہوں کہ دنیا کیسے ٹیسٹ میچ نہیں کھیلتی۔ ٹیسٹ کرکٹ میں پیسہ نہیں ہے اور یہ بغیر پیسے کے نہیں بچ سکتی۔انہوں نے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کے آنے کے بعد خاص طور پر یہ بات محسوس کی گئی ہے کہ کھلاڑیوں کو صرف فرنچائز کرکٹ کی کارکردگی کی بنیاد پر فوری طور پر انٹرنیشنل کرکٹ کھیلنے کے مواقع فراہم کیے جارہے ہیں ٗاس ضمن میں پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کی مثال دی جاتی ہے جس میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے متعدد کھلاڑی فوری طور پر پاکستانی ٹیم میں شامل کردئیے گئے ہیں۔

عاقب جاوید نے ٹیسٹ کرکٹ کو ختم کرنے کی تجویز دے دی

لاہور(اسپورٹس ڈیسک) سابق پیسر عاقب جاوید نے ٹیسٹ کرکٹ کو ختم کرنے کی تجویز دیدی۔عاقب جاوید کا کہنا ہے کہ میچ میں شریک کھلاڑیوں اورکوچنگ اسٹاف کے بغیر کوئی طویل فارمیٹ کا میچ نہیں دیکھتا، براڈ کاسٹرز کو بھی کوئی دلچسپی نہیں، وقت آگیا ہے کہ آئی سی سی کو ٹیسٹ کرکٹ کے مستقبل کا فیصلہ کرلے، جن ملکوں کو طویل فارمیٹ کے میچز کھیلنا ہیں، آپس میں طے کر کے کھیل لیں۔سابق پیسر نے کہادبئی میں جاری پاکستان اور آسٹریلیا کے ٹیسٹ میچ میں شائقین نام کو بھی نہیں، صرف دونوں ٹیموں کے کھلاڑی ہی ایک دوسرے کو سپورٹ کرنے کیلیے موجود ہیں۔ دیکھنے والوں کے پاس اب اتنا وقت نہیں کہ وہ سارا سارا دن بیٹھ کر بورمیچز کو دیکھیں۔عاقب جاوید نے کہا کہ جتنی لیگز کھیلی جارہی ہیں اس کے بعد لوگ ٹیسٹ میچز کے لیے اسٹیڈیم کا رخ کیوں کریں گے، آئی سی سی کو فیوچر ٹورپروگرام سے اس کونکال دینا چاہیے۔

سرفراز کو کپتان رہنا چاہیے، وہ کبھی دھوکا نہیں دے گا، یونس خان

کراچی (اسپورٹس ڈیسک)پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان یونس خان نے کہا ہے کہ سرفراز کو قومی کرکٹ ٹیم کا کپتان برقرار رہنا چاہیے، وہ کبھی دھوکانہیں دے گا۔کراچی میں انٹراسکول ٹورنامنٹ کی افتتاحی تقریب میں گفتگو کرتے ہوئے مہمان خصوصی سابق کپتان یونس خان نے مزید کہا کہ کپتان کو سپورٹ کرنا چاہیے تاکہ وہ یہ نہ کہے کہ وہ ایک ہفتے سے سویا نہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ خواہش ہے کہ اس ایونٹ سے ٹیلنٹ نکلے، اسکول کرکٹ کو فرسٹ کلاس جیسی سہولتیں ملنی چاہئیں۔یونس خان نے ماضی کی یادوں کو تازہ کرتے ہوئے بتایا کہ محمدحفیظ کی ٹیسٹ ٹیم میں شمولیت عجیب انداز میں ہوئی تھی،حفیظ 15کھلاڑیوں میں نہیں رہے تھے،پھر انہیں 17رکنی ٹیم میں بھی نہیں لیا گیا۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ حفیظ ٹیم میں آئے اور پلیئنگ الیون میں بھی شامل ہوئے، انہوں نے خود کو ثابت کیا،سینئر کھلاڑیوں کے ساتھ موجودہ برتاو افسوس ناک ہے۔یونس خان کے بچوں نے بھی اینیمیٹڈ فلم ڈونکی کنگ دیکھنے کی فرمائش کرڈالی۔سابق کپتان کا کہنا ہے کہ وہ بھی اپنے بچوں کے ساتھ فلم دیکھنے ضرور جائیں گے۔

پاکستان میں گیارہ سال بعد ایشین ٹور اوپن گالف چیمپئین شپ کی واپسی

کراچی(اسپورٹس ڈیسک) پاکستان میں گیارہ سال بعد ایشین ٹور اوپن گالف چیمپئین شپ کا انعقاد کیا جارہا ہے، میگا ایونٹ آج سے کراچی گالف کلب میں شروع ہوگا۔  کراچی گالف کلب میں شروع ہونے والی ایشین ٹور اوپن گالف چیمپیئن شپ میں پاکستان سمیت اٹھارہ ممالک کے ایک سو بیس گالفرز مختلف کیٹیگری کے مقابلوں میں حصہ لے رہے ہیں۔ میگا ایونٹ کی انعامی رقم تین لاکھ ڈالر ہے۔ بھارت کے پروفیشنل گالفروجے سنگھ، ہنی بسیوا اور چراغ کمار بھی ایکشن میں دکھائی دیں گے۔ چیمپیئن شپ کا فائنل چودہ اکتوبر کو ہوگا۔ جبکہ تمام کھلاڑی میگا ٹائٹل اپنے نام کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔ خیال رہے کہ گذشتہ ماہ یو ایم اے چیف آف دی نیول اسٹاف اوپن گالف چیمپیئن شپ کا انعقاد کیا گیا تھا، جس کا ٹائٹل شبیر اقبال نے اپنے نام کیا تھا، ویمنز کیٹیگری میں آنیا فاروق فاتح رہی تھیں۔ وائس ایڈمرل کلیم شوکت نے کامیاب گالفرز میں انعامات تقسیم کیے تھے۔ یاد رہے کہ گذشتہ ماہ کراچی گالف کلب میں نیول چیف اسٹاف ایشین ٹوراوپن گالف چیمپئن شپ چار روز پر مشتمل تھی، جس میں ملک بھر سے چھ سو سے زائد بہترین گالفرز نے مختلف کیٹیگریز میں حصہ لیا تھا۔

ویرات کوہلی انضمام الحق کا ریکارڈ توڑنے کے قریب

ممبئی(اسپورٹس ڈیسک)بھارتی کرکٹ کپتان ویرات کوہلی پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف سلیکٹرانضمام الحق کا ٹیسٹ میچز میں سنچری بنانے کا ریکارڈ توڑنے کے انتہائی قریب ہیں۔ویرات کوہلی نے ٹیسٹ میچز میں اب تک 24 سینچریاں اپنے نام کی ہیں جبکہ انضمام الحق کے پاس 25 سینچریوں کا ریکارڈ ہے۔بھارت اور ویسٹ انڈیز کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان دو ٹیسٹ میچوں پر مشتمل سیریز کا دوسرا اور آخری ٹیسٹ میچ 12 اکتوبر سے حیدرآباد میں شروع ہوگا۔بھارت اور ویسٹ انڈیز کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان دو ٹیسٹ میچوں پر مشتمل سیریز کا دوسرا اور آخری ٹیسٹ میچ 12 اکتوبر سے حیدرآباد میں شروع ہو گا جو 16 اکتوبر تک جاری رہے گا۔ویرات کوہلی کے پاس موقع ہے کہ وہ انضمام الحق کی جگہ لے سکتے ہیں۔ٹیسٹ میچوں میں سینچری بنانے والے کھلاڑیوں کی فہرست میں انضام الحق کا 20واں اور ویرات کوہلی کا 21 واں نمبر ہے جبکہ سچن ٹنڈولکر 51 سینچریوں کے ساتھ سر فہرست ہیں ۔انہوں نے 200 میچز میں 53 اعشاریہ 78 کی اوسط سے 15921 رنز بناکر51 سینچریاں اور 68 نصف سینچریاں بنائیں۔ون ڈے میچز میں سب سے زیادہ سینچریاں بنانے والے کھلاڑیوں میں ویرات کوہلی کا دوسرا نمبر ہے، انہوں نے ون ڈے میچز میں 35 سینچریاں اپنے نام کیں۔اس فہرست میں وہ ٹنڈولکر سے پیچھے ہیں جو کہ49 سینچریاں بناکر یہاں بھی سر فہرست ہیں۔200 میچز میں 329 اننگز کھیل کر 53.78 اوسط سے 15921 رنز بناکر 51 سینچریاں اور 68 نصف سینچریاں بنائیں۔

ٹیسٹ کرکٹ کو ختم کرنے کی تجویزدیدی گئی، مزید جانیٔے

لاہور (این این آئی) قومی کرکٹ ٹیم کے سابق ٹیسٹ کرکٹر اور لاہور قلندر کے ڈائریکٹر عاقب جاوید نے ٹیسٹ کرکٹ کو ختم کرنے کی تجویز دیتے ہوئے کہا ہے کہ 22 کھلاڑی اور کوچنگ سٹاف کے بغیر کوئی ٹیسٹ کرکٹ نہیں دیکھتا،اب وقت آگیا ہے کہ آئی سی سی کو اس فارمیٹ کے مستقبل کا فیصلہ کرلینا چاہیے۔نجی ٹی وی کے مطابق عاقب جاوید نے کہا کہ براڈ کاسٹرز کو بھی ٹیسٹ کرکٹ میں کوئی دلچسپی نہیں۔جن ممالک نے ٹیسٹ کرکٹ کھیلنی ہے آپس میں طے کر کے کھیلے۔ ایسے میں کھیلنے والے کو کیا مزہ آے گا۔ صرف دونوں ٹیموں کے کھلاڑی ہی ایک دوسرے کو سپورٹ کرنے کے لئے موجود ہیں۔ ایسی کرکٹ کا کیا فائدہ ہوگا۔ لوگوں کو ان ٹیسٹ میچز میں کوئی دلچسپی نہیں۔ ایک دو ممالک کو چھوڑ کر باقی سب جگہ ٹیسٹ کرکٹ کا یہ ہی حال ہے۔ کرکٹ کو دیکھنے والوں کے پاس اب اتنا وقت نہیں کہ وہ سارا سارا دن بیٹھ کر بور میچز کو دیکھیں ۔ آئی سی سی کو فیوچر ٹور پروگرام سے اس کو نکال دینا چاہیے۔ جو ممالک اس کو کھیلنا چاہتے ہیں۔ وہ ضرور کھیلیں۔