اشتہارات

بٹلر اور بیس ڈٹ گئے، انگلینڈ اننگز کی شکست سے بچنے میں کامیاب

site_admin

پاکستانی باؤلرز کی شاندار باؤلنگ کے باوجود جوز بٹلر اور ڈومینک بیس کی عمدہ مزاحمتی بیٹنگ کی بدولت انگلینڈ نے پاکستان کے خلاف پہلے ٹیسٹ میچ میں اننگز کی شکست سے بچتے ہوئے دوسری اننگز میں 56رنز کی برتری حاصل کر لی ہے۔

کرکٹ کے گھر لارڈز میں کھیلے جارہے 2 میچوں سیریز کے پہلے ٹیسٹ میچ میں پاکستان ٹیم کھیل کے تیسرے روز 363 رنز بنا کر آل آؤٹ ہوگئی۔

میچ کے تیسرے دن پاکستان نے 350 رنز 8 کھلاڑی آؤٹ سے اپنی نامکمل اننگز دوبارہ شروع کی تو محمد عامر اور محمد عباس گزشتہ روز کے اسکور میں صرف 13 رنز کا اضافہ کر پائے۔

پاکستانی بلے باز بابر اعظم کلائی میں انجری کی وجہ سے دوبارہ بیٹنگ کرنے نہیں آئے، اسی وجہ سے محمد عباس کے آؤٹ ہونے کے بعد پاکستان کی اننگز تمام ہوئی اور پاکستان نے پہلی اننگز میں 179 رنز کی بڑی برتری حاصل کی۔

179 رنز کے خسارے سے دوچار انگلینڈ کی اننگز کا آغاز تباہ کن ثابت ہوا اور صرف ایک کے اسکور پر گزشتہ اننگز میں 70 رنز بنانے والے ایلسٹر کک محمد عباس کو وکٹ دے بیٹھے۔

کپتان جو روٹ اور مارک اسٹون مین نے اسکور کو 31 تک پہنچایا ہی تھا کہ شاداب خان نے انگلش اوپنر کو میدان بدر کر کے پاکستان کو دوسری کامیابی دلائی۔

اس موقع پر روٹ کا ساتھ دینے ڈیوڈ ملان آئے اور دونوں کھلاڑیوں نے 60 رنز کی شراکت قائم کر کے ابتدائی نقصان کا ازالہ کرنے کی کوشش کی لیکن اس سے قبل کہ یہ شراکت مزید طوالت اختیار کرتی، محمد عامر نے اپنے ایک ہی اوور میں پہلے 12 رنز بنانے والے ملان اور پھر ایک ہی گیند بعد جونی بیئراسٹو کی اننگز کا بھی خاتمہ کردیا۔

بین اسٹوکس نے آتے ہی جارحانہ انداز اپنانے کی کوشش کی اور 2 چوکے لگائے لیکن انہیں جلد ہی جارحیت بھاری پڑ گئی اور شاداب خان کی گیند پر وہ فخر زمان کو کیچ دے کر پویلین لوٹ گئے۔

انگلینڈ کو بڑا دھچکا اس وقت لگا جب 110 کے مجموعی اسکور پر عباس کی گیند پر انگلش کپتان 68رنز بنانے کے بعد ایل بی ڈبلیو قرار پائے۔

جوز بٹلر اور ڈومیک بیس نے ساتویں وکٹ کے لیے ناقابل شکست 125رنز کی شراکت قائم کر کے انگلینڈ کو اننگز کی شکست سے بچا لیا— فوٹو: اے ایف پی
جوز بٹلر اور ڈومیک بیس نے ساتویں وکٹ کے لیے ناقابل شکست 125رنز کی شراکت قائم کر کے انگلینڈ کو اننگز کی شکست سے بچا لیا— فوٹو: اے ایف پی

جب میچ کے تیسرے دن چائے کا وقفہ ہوا تو انگلینڈ نے 6 وکٹ کے نقصان پر 111 رنز بنائے تھے اور اننگز کی شکست کا خطرہ اس کے سر پر منڈلا رہا تھا لیکن اس مرحلے پر ڈومینک بیس اور جوز بٹلکر کی جوڑی ڈٹ گئی۔

دونوں کھلاڑیوں نے چائے کے وقفے کے بعد ذمے دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے پاکستان کے تمام باؤلرز کی جارحانہ باؤلنگ کا ڈٹ کر سامنا کیا جس کے سبب انتہائی کوشش کے باوجود پاکستانی ٹیم آخری سیشن میں کوئی وکٹ نہ لے سکی۔

دونوں کھلاڑی دن کے اختتام تک ساتویں وکٹ کے لیے 125 رنز جوڑ چکے تھے جس کی بدولت انگلینڈ کو دوسری اننگز میں 56رنز کی برتری حاصل ہو گئی ہے، بٹلر 66 اور پہلا میچ کھیلنے والے بیس 55 رنز پر بیٹنگ کر رہے ہیں۔

پاکستان کی جانب سے محمد عباس، حسن علی اور شاداب خان نے 2، 2 وکٹیں حاصل کیں۔

دیگر متعلقہ خبریں

اشتہارات